مسلم، الصحيح، 1: 117، رقم: 128، بيروت، لبنان: دار احياء التراث العربى

یعنی اگر کوئی شخص کسی نیک کام کی نیت کر لے لیکن کسی مجبوری کے باعث نہ کرسکے تب بھی اس کے نامہ اعمال میں ایک نیکی لکھی جائے گی اور اگر وہ عمل کر لے تو پھر اس عمل کے کرنے پر دس گنا اجر لکھا جاتا ہے۔

’’جو کوئی ایک نیکی لائے گا تو اس کے لیے (بطورِ اجر) اس جیسی دس نیکیاں ہیں‘‘۔

(الانعام، 6: 166)

ور جو شخص دنیا کا انعام چاہتا ہے ہم اسے اس میں سے دے دیتے ہیں، اور جو آخرت کا انعام چاہتا ہے ہم اسے اس میں سے دے دیتے ہیں۔

آل عمران، 3: 145

Podden och tillhörande omslagsbild på den här sidan tillhör Kashifa Qureshi. Innehållet i podden är skapat av Kashifa Qureshi och inte av, eller tillsammans med, Poddtoppen.